2023 agreement of lozan and the role of ertugrul ghazi urdu/hindi

دوستوں آج کی اس پوسٹ میں آپ کو ترکی کے (2023 agreement)کے بارے میں بتاو گا کے یہ (agreement)ہے کیا اور (2023)میں ترکی کے سات کیا ہونے والا ہے کیوں (2023)ترکی کے لیے اتنا اہم ہے۔دوستوں ایسے ہی کچھ سوالوں کے جواب میں آپ کو اس پوسٹ میں دو گا تو پوسٹ کو اخر تک ضرور پڑھنا۔

2023 agreement lozan and the role of ertugrul ghazi urdu/hindi


دوستوں طایب ارد گان اس واقت مسلم دنیا کے ہیوروں ہے۔دوستوں طا یب اردگان (2003-2020)میں ابھی بھی طایب اردگان ترکی کے پرایم منسٹر ہے۔دوستوں طایب نے کمال اتا ترک کے (سکیولر)ترکی فوج اور ادعلہ سے بنا کسی مدد کے ترکی کو اسلامی ترکی کی ترف غامزن کر دیا ہے۔دوستوں ترکی (1299-1923)تک اسلامی ریاست کا مرکز رہاں تھا جسے آج ہم سب سلطنت اسمانیہ کہتے ہے۔دوستوں اس سلطنت کت خاتمہ کے بعد ترکی کمال اتا ترک کی کیادت میں ا سلامی دنیا سے ہٹ کر بے ہیائی کی ترف جانے لگا۔اور ترکی کو ایک سکیولر ریاست میں بد ل دیا گیا ہر ترف بے ہیائی کا راج ہونے لگا کیونکہ دوستوں اتا ترک نے ہر وہ کام کیا جس کو کرنے سے اسلام میں منہ کیا گیا ہے۔دوستوں  1923میں پہلی جنگہ عزیم کے بعد سلطنت اسمانیہ کی مخالف ریاستے جن میں (فرانس،جرمنی اور
بر طا نیاں)شامل تھے دوستوں انہوں نے زبر دستی ترکی کے سات ایک محایدہ کیا اور اس محایدہ کو (محاید ہ لوزان)کہتے ہے۔

دووستوں اس محاید پر دستاخط کرنے والا کمال اتا ترک ہی تھا دوستوں اس محاید کے مطابق تین بڑے عزموں پر پہلی ریاست کو ختم کر دیا گیا ترکی کے تمام مسایف سے دست بر داری کا علان کر نے کا کہاں گیا جس کے نتجے میں چالس ملک واجود میں ائے اور دوستوں اسلام اور ریاست پر پابندی لگا کر تر کی کو ایک (سکیو لر)ریاست کرار دے دیا گیا دوستوں آپ کو بتا دے کے ترکی کے قدراتی واثایل میں (پٹرول)سب سے اپر ہے اس کی ڈریلنگ پر مکمل پابدندی لگا دی گئی دوستوں ترکی کی بندر گاہ جس کا نام (باس بورس)ہے یہ دنیا کی اتہائی اہم بندر گاہ ہے۔کیونکہ دوستوں یہ بندر گاہ (اشیاء اور یورب)کو کم رین فصلہ سے جورتی ہے دوستوں اس بندر گاہ پر پابندی لگا کر اسے علمی ملکیت کرار دے دیا گیا یو دوستوں اس کا اختیار تمام یورپی ممالک کے پاس چلا گیا۔دوستوں جیسا کے ہم سب واقعف ہے کے ایک ملک کی ترقی کے لیے اس کی بندر گاہ کتنی اہم ہے۔دوستوں اس محاید میں یہ پابندی لگا دی گئی کے اس بندر گا ہ سے ترکی کسی قسم کا کوئی بھی ٹکس نہیں لگا سکتا ہے دوستوں آپ یو سمج لیے کے اس محاید کے تحط ترکی کے ہاتھ سو سال کے لیے بند کر ایک ترف ترکی کو پھنک دیا گیا دوستوں محایدہ لوزان کی مددت سو سال تھی اور اس محایدہ کو (2023)میں ختم ہونا تھا اور جیسا کے ہم سب جانتے ہے (2023) میں کافی قریب ہے۔

دوستوں اسی وجہ سے علمی طاقتوں کی نیند اس قوف سے ارتی جارہی ہے کے (2023)میں جب یہ محاید ختم ہو جائے گا تو ترکی پھر سے کئی دوبارہ سلطنت اسمانیہ کا روپ نہ لے لیے۔دوستوں آپ کو یہ بھی بتا دے کے کیوں یورب(ارطغرل غازی)کو خاموش ایٹم بمب کھ رہاں ہے کیونکہ ترکی اس ڈرمہ کے زرعہ یہ بتا رہاں ہے کے کیسے ہم نے سلطنت اسمانیہ قایم کی اب ہم پھر دوبارہ وہ خلافت قیم کرئے گے

اور دوستوں (2023)میں جب یہ محایدہ ختم ہو گا تب ترکی پر لگی ساری پابندیاں ختم ہو جا ئی گی۔اور دوستوں جیسا کے آپ سب جانتے ہے کے جب بھی کسی مسلمان پر زلم ہوتا ہے تو سب سے پھلے طایب اردگان ہی اواز بلند کرتے ہے پھر چائیے وہ مسلہ (شام کا ہو یہ کشمیر کا) دوستوں جب امریکی صدر (ٹرپ)نے پاکستان پر الزام لگائے تو سب سے پہلے ایک ہء مسلم حکمران نے اس کے الفاظ کی کھول کے مزمت کی اور اس حکمران کا نام طایب اردگان ہے۔

دوستوں طایب اردگان کی فیموں فراست میں ترکی کو تما اسلامی رایا ست کی قیادت کے لیے تیار کر لیا ہے۔دوستوں دنیا کے کسی بھی ملک میں چاہیے کوئی بھی مسبت ا جائے طایب اردگا ان کی مدد کرنے میں سب سے اگے ہوتے ہے۔اور دوستوں آپ کو یہ بھی بتا دے کے طایب اردگا ن کو ترکی کے بہت سے علقوں میں سلطان بھی کہاں جتا ہے اس سے سلطنت اسمانیہ کے دور کی یعد تا زہ ہوتی ہے۔دوستوں یورپ کو یہ ڈر ہے کے کئی ایک بار پھر ترکی طایب اردگان کی قیا دت میں دوبارہ خلافت کی ترف گامزن نہ ہوجائے۔

دوستوں اسی ڈر کی وجہ سے ایک بار امیریکا کی کہنے پر ترکی میں (مشعلہ)لگانے کی کوشش کی گئی اور فوج نے حکومت کے خلاف بغاوت کر دی  لیکن دوستوں عوام نے طایب اردگان کی محبت میں فوجی ٹنکوں کے اگے لیٹ کر اس با غاوت کو بھی کچل دیا۔دوستوں اس کے بعد بھی ترہاں تر ہاں کی سازشے ان پر مزید کی جا رہی ہے جو ان کے اس خوف کو زہر کرتا ہے کے مسلمان کئی ایک بار پھر جوڑ نہ جائے 

دوستوں طایب اردگان بار بار اپنی تکریروں میں کھ چکے ہے کے ترکی (2023)کے بعد پہلے جیسا نہیں رہے گا بلکہ علمی سیاست میں اپنا قردار ادا کرئے گا۔اور ددوسرے ترف دوستوں مڈیاں ووار کے زرئے امریکی ٹکنولو جی میشیت اور اس کی جنگی حتیاروں کا خوف دنیا پر بٹھا دیا گیا ہے جو دوستوں اصل حقیقت نہیں ہے اس کا سبوت پاکستان میں (نیٹو فورسس)کے چوری ہونے والے ۹۱ ہزار اصلہ سے بہرے کنٹنر ہے جو اچا نک کہی غایب ہو گئے طامام تر امریکی ٹیکنولو جی مل کر آج تک اس کا کوئی سراغ نہیں لگا پئی یہ وہ امیریکا ہے جو اپنی سٹلایٹ کی تعرفے کرتے نہیں تھکتا ہے اور دوستوں اس کے علاوہ تمام تر امریکی ٹیکنو لوجی مل کر آج تک پاکستان کے (اٹمی احسا سو)کو نہیں ڈہونڈ پائے کے وہ اخر کہاں موجود ہے یقنن طایب اردگا ن بھی اس بات سے اچھی ترہاں واقف ہے لہازاں وہ کہلم کہلاں (2023) کے بعد 

برطانوئی،امریکی اور اسرایلی متحایدہ کو ایک بر پھر سے علمی سیاست پر ٹکر دینے کے لیے تیار ہے۔دنیا ایک بر پھر سے بدلنے والی ہے دوستوں انے والے ۳ سال انتہائی اہم ہے جو ایک بہت بڑی تبد لی لے کر ائے گے لیکن دوستوں اس دوران اردگان اور ترکی مخالف پروپو گینڈا ضور پکر تا جاہیے گا۔کیونہ دوستوں یہو دی لوبی دنیا کے اس ۷۹ فیصد مڈیا ں کا استعمال کرئے گی جس کے یہ مالک ہے لیکن دوستوں جیسا کے آپ سب کو پتا ہے ان کے اس پرووپر گینڈے کو بھی ارطغرل غازی ڈرامہ کی مدد سے طایب اردگان نے کمزور کر دیا ہے۔

دوستوں جیسا کے ہم سب کو پتا ہے کے ارطغرل کی وجہ سے ہم ان یورپی ہیوروں کو چھوڑ کر اپنے اصل ہیروں کو جان رہے ہے اور ہمارے اندر جہاد کا جزبا پیدا ہو رہاں ہے دوستوں میں آپ سب سے سرف یہی کہناں چہاہوں گا کے جو آپ سب فلمے ڈراموں پر اپنا واقت زیا ں کرتے ہے اس کی جگہ (بدھ سے اتوار)تک ہر رات ۸ بجے ارطغرل ڈرامہ کو دیکھ لیا کرئے تکے آپ کا بھی ایمان تزا ہو جائے۔

دوستوں یہ تھی ہماری آج کی پوسٹ امید ہے اس کے زریعہ آپ تک کچھ علم لم گیا ہو گا تو اس متعلق اپنی رائے کومنٹ بوکش میں آپ دے سکتے ہے اور اس پوسٹ کو اپنے دوستوں میں بھی شئیر کرئے تکے وہ بھی اس بارے میں جان سکے ملتے ہے اگلی پوسٹ میں تب تک کے لیے 
(اللّلہ فیز)

subscribe this blog thank you.





Post a Comment

0 Comments