Why did Prophet Muhammad stop fighting the Turks? || Prophet Muhammad's prophecies about the Turks that you must know || shahmeer blog tv


Why did Prophet Muhammad stop fighting the Turks? ||  Prophet Muhammad's prophecies about the Turks that you must know || shahmeer blog tv


دوستوں آج ہم بات کرے گے کے حضرت محمد ﷺ نے ترکوں کو جنگ کرنے سے کیوں روکا اور ترکوں کے بارے میں حضرت محمد ﷺ کی میشنگوئیاں۔ان سب کے حولہ سے آج ہم بات کرے گے کے وہ میشنگوئیاں کیا ہے۔اور ترکوں کو حضرت محمد ﷺ نے کیوں رو کا دوستوں آج کو موضوں بہت ہی اچھا ہونے والا ہے تو اخر تک ضرور بنے رہے۔

دوستوں ترکی کے شہر استنبول کا شمار دنیا کے قدیم ترین شہروں میں ہوتا ہے یہ شہر پاکستان کے شہر کراچی سے بھی بڑا ہے اس شہر کی تاریخ 2000سال پرانی ہے ایک مرتبہ حضرت محمد ﷺ نیند سے جاگے تو مسکورا رہے تھے جب واجہ پوچھی تو کہا کے میں نے خواب میں دیکھا کے میری امت کے کچھ لوگوں نے قستنتونیا ں پر حملہ کیا اوراللّلہ نے ان کی مغفرت فرما دی یاد رہے قستنتونیا ں استنبول کا پرانا شہر ہے۔
دوستوں حضرت محمد ﷺ کے دور میں استنبول پر ایسائیوں کی حکومت تھی استنبول کی اس لیے فتح نہیں ہو سکا کیوں کے اس کے قلعہ کی مضبوت دیوارے اتنی مضبوت تھی کے تا ریخ میں کہا جاتا ہے کے اس دیوا ر پر اتنے توپ کے گولے پرئے تھے مگر پھر بھی یہ دیوارے نہیں گری تھی اتنی مضبوت حکومت کے بارے میں محمدؐ نے فرمایا تھا کے میری امت کے کچھ لوگ اس پر حملہ کرے گے اور اس کو فتح کر لیے گے آپ ﷺ کی یہ بات سن کر اصحابہ کرام بہت ہیران ہوئے کے اتنی چھوٹی سی ریاست کے لوگ اتنی بڑی ریاست کو کیسے فتح کر سکتے ہے اس واقت مدینہ کی ریاست اتنے رقبہ پر پہلی تھی کے مجود ا مسجد نبوی جتنی اور استنبول پاکستاں کے سب سے برے شہر کراچی سے بھی برا تھا مگر کچھ ہی سدیوں کے بعد سلطان محمد فاتح نے ا ستنبول کو فتح کر کے حضرت محمد ﷺ کا خواب پرا کر دیا اور ویسے بھی جو بات میرے حضورﷺ کہہ دے وہ کیسے پوری نہ ہوتی۔

دوستوں سلطان محمد نے صرف ڈیر ہفتہ میں اس شہر کو فتح کر لیا جو کئی حکمرن نہ کر سکے اس جنگ میں آپﷺ کے صحابی حضرت ایوب انساری ؓ بھی تھے جو استنبول کے باہر ہے وافات پہ گئے حضرت ایوب انساری کی قبر آج بھی استنبول میں مجود ہے۔دوستوں استنبول کی ازادی دراصل سلطنت اسمانیاں کی بنیاد تھی دوستوں سلطنت اسمانیان تین برے اضموں پر پہلی ہو ئی تھی دوستوں سلطنت اسمانیاں کی بنیاد سلطان اسمان نے رکھی تھی اور یہ ارطغرل غازی کے بیٹے تھے اور آکے دنوں میں آپ سب ہی ارطغرل غازی کو جانتے ہے اور کمینٹ میں بتائے کے آپ کو  ارطغرل غازی ڈرامہ کیسا لگ رہا ہے کہر۔

اس کے الاوا آپ ﷺ نے ترکوں بارے میں میشنگوئی کرتے ہوئے فرمایا کے ترکوں کو اکیلا چھور دینا جب تک کے وہ تمہیں اکیلا چھور دے یہ ترکوں سے جنگ نہ لرنا اگر لرے تو تمہیں شکشت ہو گی آپ ﷺ کی یہ میشنگوئی بھی جب صابت ہو ئی جب سلطان محمد فاتح نے قستنتونیاں کے ایرد گیرد مجود عرب علاقوں کو بھی فتح کر لیا جہا ں اس واقت سلجوکوں کی حکومت تھی۔

سلطان محمد فاتح کے بعد اللّلہ نے سلطنت اسمانیاں کو کئی اچھے لیڈروں سے نوزا ہے اور یہ سلطنت مضبوت سے مضبوت ہوتی چلی گئی لیکں اخیر کار 1922میں اس کا ختمہ ہو گیا اور اس پر اگلے سو سالوں کے لیے ایسی پابندیاں لگا دی گئی کے ترک اگلے سو سال تک سلطنت اسمانیاں کا م بھی نہ لے سکے اس کے بارے میں کل میں تفصیل سے پوسٹ میں بتا ؤں گا تو جلدی ہی سے ہمارے اس بلوگ کو سبسکرئب کر لیے۔
دوستوں کل کی پوسٹ بہت ہی کمال کی ہونے والی ہے جس جس نے اس پوسٹ کو پڑھ لیا سمجوں اس کے اندر بھی جہاد کا جذبہ پیدا ہو جائے گا۔ اللّلہ ہم سب مسمانوں کو اپنے حفضوایمان میں رکھے



Post a Comment

0 Comments